بین الاقوامی

‏مودی پاکستان کے ساتھ معمول کے تعلقات چاہتے ہیں‏

‏مودی پاکستان کے ساتھ معمول کے تعلقات چاہتے ہیں‏

‏ ہیروشیما میں جی سیون سربراہ اجلاس میں شرکت کے لیے جاپان کے دورے سے قبل بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا ہے کہ ان کا ملک پاکستان کے ساتھ ‘نارمل اور غیر قریبی تعلقات’ کا خواہاں ہے۔‏

‏تاہم انہوں نے اس معاملے پر بھارت کے موقف کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردی اور دشمنی سے پاک سازگار ماحول پیدا کرنے کی ذمہ داری اسلام آباد پر عائد ہوتی ہے۔‏

‏پاکستان نے بھارتی موقف کو مسترد کرتے ہوئے رواں ماہ کے اوائل میں بھارت سے کہا تھا کہ ‘سفارتی پوائنٹ سکورنگ کے لیے دہشت گردی کو ہتھیار بنانے میں نہ پھنسیں’۔‏

‏مودی نے جاپانی اخبار ‏‏نکی ایشیا‏‏ سے بات کرتے ہوئے مشرقی لداخ میں ہندوستان اور چین کے درمیان تعطل کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ چین کے ساتھ معمول کے دوطرفہ تعلقات کے لئے سرحدی علاقوں میں امن و سکون ضروری ہے۔‏

‏یہ کہتے ہوئے کہ ہندوستان اپنی خودمختاری اور وقار کے تحفظ کے لئے پرعزم ہے ، انہوں نے مزید کہا کہ “ہندوستان اور چین کے تعلقات کی مستقبل کی ترقی صرف باہمی احترام ، باہمی حساسیت اور باہمی مفادات پر مبنی ہوسکتی ہے”۔‏

‏انہوں نے کہا کہ تعلقات کو معمول پر لانے سے وسیع تر خطے اور دنیا کو فائدہ ہوگا۔‏

‏ہندوستان کی معیشت کے بارے میں بات کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ یہ دنیا کی سب سے تیزی سے بڑھتی ہوئی معیشتوں میں سے ایک ہے اور اس بات پر زور دیا کہ ملک 10 میں 2014 ویں سب سے بڑی معیشت سے بڑھ کر اب عالمی سطح پر پانچویں سب سے بڑی معیشت بن گیا ہے۔‏

‏انہوں نے مزید کہا کہ ان کی حکومت کا مقصد اگلے 25 سالوں میں ہندوستان کو ایک ترقی یافتہ ملک میں تبدیل کرنا ہے۔‏

‏روس یوکرین تنازعہ کے بارے میں مسٹر مودی نے اخبار کو بتایا کہ یوکرین تنازعہ پر ہندوستان کا موقف “واضح اور غیر متزلزل” ہے۔‏

‏انہوں نے کہا کہ بھارت امن کے ساتھ کھڑا ہے اور مضبوطی سے کھڑا رہے گا۔ ہم ان لوگوں کی مدد کرنے کے لئے پرعزم ہیں جو اپنی بنیادی ضروریات کو پورا کرنے میں چیلنجوں کا سامنا کرتے ہیں ، خاص طور پر خوراک ، ایندھن اور کھاد کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کے پیش نظر۔ ہم روس اور یوکرین دونوں کے ساتھ رابطے برقرار رکھے ہوئے ہیں۔‏

‏انہوں نے زور دے کر کہا، “تعاون اور تعاون ہمارے وقت کی وضاحت کرنا چاہئے، تنازعات نہیں۔‏

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button